عر شی قریشی داعش معاملہ میں بحث و جرح مکمل ،فیصلہ محفوظ

Maharashtra

عر شی قریشی داعش معاملہ میں بحث و جرح مکمل ،فیصلہ محفوظ

19؍ مئی تک عدالت کا فیصلہ آنے کی امید

 ممبئی ۔6؍ مئی 2022 (پریس ریلیز) آئی۔ آر۔ایف سے تعلق رکھنے والے عرشی قریشی جس پر غیر مسلم نو جوانوں کو مذہب تبدیل کراکے داعش میں بھرتی کرانے سمیت کئی سنگین الزامات لگائے ہیںاس کیس سے متعلق آج ممبئی خصوصی این آئی اے عدالت میں بحث و جرح مکمل ہو گئی ہے ،عدالت نے اپنا فیصلہ محفوظ کر لیا ہے ،19؍ مئی تک عدالت کا فیصلہ آنے کی توقع کی جا رہی ہے ۔اس بات کی اطلاع آج یہاں اس مقدمہ کو قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی صاحب نے دی ہے۔

  مزید تفصیلات دیتے ہوئےانہوںنے بتایا کہ عرشی قریشی کا معاملہ این آئی اے کی خصوصی عدالت میں زیر سماعت تھا این آئی اے کی طرف سے کل 57 گواہ  پیش کئے گئے جس نمایاں طور پر  این آئی اے کے افسران ،ممبئی کرائم برانچ کے افسران ،الگ الگ ٹیلیفون کمپنی کے نوڈل آفیسر س اور مذہب تبدیل کرکے لاپتہ ہوئے اہل خانہ کے رشتہ دار شامل ہیں ۔واضح رہے کہ استغاثہ این آئی اے کی جا نب سے اس بات پر زور دیا گیا کہ آئی آرایف کے کار کن عرشی قریشی نے نہ صرف غیر مسلموں کواسلام کی دعوت دی بلکہ ان کی ذہن سازی کرکے داعش اور آئی ایس آئی ایس جیسی ممنوعہ تنظیم میں بھر تی ہو کر لڑنے پر آمادہ کیا ،جب کہ دفاع نے پر زور طریقے پر تمام شواہد کی روشنی میں عدالت کے سامنے یہ واضح کر دیا کہ عرشی قریشی نے زبر دستی کسی کا مذہب تبدیل نہیں کروایا ،بلکہ وہ لوگ اپنی رضاء مندی سے حق کی راہ پر آئے اور اسلام قبول کئے ۔

مزید یہ کہ ان کی ذہن سازی اور داعش میں بھرتی ہونے کی کوئی خاطر خواہ ثبوت براہ راست یا باالراست عدالت کے سامنے پیش کرنے سے استغاثہ قاصر رہی دفاع کی جا نب سے کئی قانونی نکاۃ کو تفصیل سے بحث کا حصہ بنایا گیا ،سپریم کورٹ اور الگ الگ ہائی کورٹ کے در جنوں نظیر دونوں جانب سے پیش کئے گئے،عدالت میں اس کیس کی پیروی  کے لئے جمعیۃ لیگل سیل کے سکریٹری ایڈوکیٹ پٹھان تہور خان ،ایڈوکیٹ عشرت علی خان کر رہےتھے ۔جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی صاحب نے کہا کہ گذشتہ چھ برس سے ہماری جمعیۃ لیگل ٹیم حق و انصاف کے لئے پوری ایمان دارای اور مستعدی سے جدو جہد کر رہی تھی اللہ تبارک و تعالی کامیابی سے سرفراز فر مائے اور بے گناہ عرشی قریشی کے انصاف کے لئےحائل رکاوٹوں کو دور فر مائے ۔