مکاتب کا قیام بقائے اسلام کا ضامن اور تحفظِ ایمان کا کفیل ہے۔ مولانا ندیم صدیقی

Beed

مدرسہ دارارقم بیڑ میں جلسہ عام و تقسیم اسناد

مکاتب کا قیام بقائے اسلام کا ضامن اور تحفظِ ایمان کا کفیل ہے۔ مولانا ندیم صدیقی

  بیڑ ۔ 28 ؍ مارچ 2022 ( پریس ریلیز ) معاشرہ اور سوسائٹی میں مکاتب کا قیام بقائے اسلام کا ضامن اور تحفظِ ایمان کا کفیل ہے، ان مکاتب سے علم کی جو روشنی نکل رہی ہے اس سے پوری دنیا سیراب و فیضیاب ہورہی ہے ، ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اپنے بچوں کو ان مکاتب کی طرف متوجہ کریں جس سے ان کے اندر دینی ماحول پیدا ہو مکاتب کے نظام کی مضبوطی کی وجہ سے اپنی نسلوں کے ایمان کو محفوظ رکھا جا سکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار گذشتہ کل جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی صاحب نے مومن پوری کی جامع مسجد میں منعقدہ غیر اقامتی مکتب کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجلاس کے مہمان خصوصی مولانامحمد عمر پالنپوری صاحب نے معاشرتی زندگی  کے مختلف گوشوں پر روشنی ڈالتے ہوئے موجودہ دور کے فتنوں کا تذکرہ اور اس کے سدباب کے ذرائع اور علماء کرام کی ذمہ داریاں اسی پر روشنی ڈالی اور حاضرین سے عہد لیا کہ وہ مکاتب کا تعاون کریں گے۔
 سرپرست مکتب مفتی عبداللہ قاسمی صاحب( صدرجمعیۃعلماء ضلع بیڑ )نے مکتب کی کارگزاری سنائی اور بتایا کہ یہ طلباء عصری علوم کے ساتھ حفظ قرآن کی سعادت سے بہرہ ور ہو رہے ہیں اور یہ ڈاکٹر ٹیچر اور تاجر حضرات کے بچے ہیںحفاظ طلبا ءکو صدر جلسہ اور مولاناحافظ محمد ندیم صدیقی صاحب( صدر جمعیۃ علماء مہاراشٹر) اور حاضرین علماء کرام کے دست مبارک سے طلباء کرام کے درمیان اسناد و انعامات تقسیم کیے گئےحاضرین نےحفاظ طلباء کی انعامات سے نواز کر خوب ہمت افزائی کی۔ اجلاس کا آغاز مکتب کے طالب علم حذیفہ قریشی کی تلاوت کلام پاک سے ہوا، محمد کیف نے گلہائے عقیدت کا نذرانہ پیش کیا ، طلباء کرام نے مختصر بڑا دلچسپ پروگرام پیش کیا ، مولانا شیخ احمد صاحب کا شفی نے اجلاس کی صدارت فرمائی، نظامت کے فرائض حافظ مولانا عمران اشاعتی استاد حفظ مدرسہ دار ارقم نے نے بخوبی انجام دی ۔

حفظ قرآن مکمل کرنے والے پانچوں حفاظ کرام اور ایک مجلس (بیٹھک)میں قرآن سنانے والے تین خوش نصیب طلباء کی کار کردگی پر خوشی کا اظہار کیا اور اساتذہ کو انعام سے نواز کر ہمت افزائی بھی فرمائی گئی۔ حافظ سرتاج صاحب نے کلمات تشکر ادا کیااس پروگرام میں کثیر تعداد میں علماء دانشوران نے شرکت کی خصوصا مولانا صابر صاحب رشیدی مولانا الیاس قاسمی مولانا عبدالعلیم قاسمی مولانا عبدالرحیم قاسمی مولانا عقیل مولانا اقبال قریشی مولانا جمیل قریشی حافظ عبد القیوم حاجی عبد الصمد صاحب قمر بھائی حاجی جاوید قریشی رفیق قریشی سیٹھ اس پروگرم کو حسین بھائی صدر جامع مسجد اور دار ارقم کےاساتذہ کامیاب بنانے میں انتھک کوشش کی۔