دین و ایمان کی حفاظت کے لئے مکاتب اسلامیہ اہم ذریعہ ہیں

Maharashtra

دین و ایمان کی حفاظت کے لئے مکاتب اسلامیہ اہم ذریعہ ہیں
 دینی تعلیمی بیداری مہم کے تحت ناگپور میں منعقدہ مشاورتی اجلاس میں مفتی محمد روشن شاہ قاسمی صاحب و دیگر کا اظہار خیال

   21 ؍ مار آج 2022۔ (پریس ریلیز) یہاں مدرسہ دارالعلوم مومن پورہ ، ناگپورمیں ایک اہم مشاورتی مجلس کا انعقاد کیا گیا۔اس میٹنگ میں شہر و اطراف کے علماء ،حفاظ وذمہ داران مدارس نے شرکت کی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر دینی تعلیمی بورڈ، جمعیۃ علماء مہاراشٹر مفتی محمد روشن شاہ قاسمی صاحب نے فرمایا کہ اللہ کا کرم و احسان ہے کہ اس نے ہمیں ایمان کی دولت سے نوازہ اب ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم اس اثاثہ کی حفاظت جی جان سے کریں ۔ ملک کے حالات آزادی ہند سے مسلمانو ں کے مخالف رہے ہیں اور مسلمانوں کی نسل کشی ان کے دینی تشخص کو ختم کرنے انہیں جانی ومالی نقصان پہنچانے کی بھر پور کوشش ہورہی ہے ۔ کبھی فسادات کے ذریعہ اور کبھی ان کی دوکان وکاروبار کو نذر آتش کرکے جانی ومالی نقصان پہنچایا جا رہا ہے ۔ مسلمانوں پر آنے والی ان مخالف حالات میں جمعیۃ علماء ہمیشہ ان کے ساتھ کھڑی رہی اور ہر ممکن کوشش کرتی رہی اورکر رہی ہے ۔ان کوششوں میں ناکامی کے بعد باطل اب نئے منصوبہ کے تحت مسلمانوں کو دینی طور پر مفلوج کرنے کی کوشش کر رہاہے ۔ اس مقصدر کے لئے نئی تعلیمی پالیسی جو شرک و کفر سے بھر پور ہے کانفا ذ کیا جا رہا ہے ۔

 انہوں نے مزید کہا کہ اپنی نسلوں میں دینی تشخیص اور ان کے دین وایمان کی حفاظت کے لئے مکاتب ہی ذریعہ ہیں۔ آج کے حالات میں تقریباً ۸۰؍فیصد بچے مکاتب سے دور ہیں ۔جو ذہنی اعتبار سے ارتداد کی طر ف جارہے ہیں۔ باطل کی کوشش ہے کہ مسلمانو ں کے عقائد ،ذہن ، روایات و تہذیب کو بدل دیاجائے ۔ اس لئے اپنی نسلوں کو دینی وایمان کی حفاظت اور کفر وشرک سے حفاظت کے لئے انہیں مکاتب سے جوڑنا انتہائی ضروری ہے ۔میٹنگ کی ابتداء تلاوت کلام پاک سے ہوئی میٹنگ کے مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے حضرت مولانا سراج احمد قاسمی صدر جمعیۃ علماء ضلع ناگپورنے بتایا کہ جمعیۃ علماءنے ۲۳؍فروری سے ۹؍مارچ ۲۰۲۲ءتک دینی تعلیمی عشرہ منایا گیا۔جسمیں لوگوں میں دینی تعلیم کے لئے بیداری پید ا کرنے کی کوشش کی گئی۔ اسی بابت  آج ہمارے شہر ناگپور میںحضرت مولانا محمد ندیم صدیقی صدر جمعیۃ علماء مہاراشٹر کے زیر سرپرستی اور حضرت مولانا مفتی سید محمد سلمان منصورپوری ،جنرل سکریٹری دینی تعلیمی بورڈ جمعیۃ علماء ہند کے زیر ہدایت پر دینی تعلیمی بیداری اجلاس منعقد کیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس مہم کا مقصد امت مسلمہ کے ہر بچہ اور بچی کو بنیادی دینی تعلیم سے آراستہ کرنا ہے ۔ ہمارے شہر میں بھی بچے اور بچیوں کی ایک بڑی تعداد دینی تعلیم سے محروم ہے ۔
مفتی محمد عارف امام جامع مسجد مومن پورہ نے دینی تعلیم کی اہمیت پر روشنی ٹالتے ہوئے فرمایا کہ ملک کے بدلتے حالات میں امت مسلمہ کے نوجوانوں کے ایمان کی حفا ظت اور ارتداد سے بچانے  کے  لئے  بنیادی دینی تعلیم دینا انتہائی ضروری ہے ۔مولانا توقیر احمد قاسمی ناظم تعلیمات مدرسہ مدینۃ العلوم ناگپور نے اپنے خطاب میں فر مایا کہ باطل اپنی کوششوں میں لگا ہوا ہے اور اہم ابھی بھی خواب غفلت میں ہیں ہمیں غفلت سے نکل کر دینی تعلیم کے تعلق سے بیداری پیدا کرنے کی ضرورت ہے ۔ قاری محمد صابر صاحب نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے مکاتب کی افادیت پر روشنی ڈالی ۔ ساتھ ہی گھر و ں میں دینی ماحول بنانے کی اہمیت پر زور دیا ۔ اگر گھر و ں میں دینی ماحول ہوگا تو بچے بھی دین دار ہوں گے ۔ مولوی مسعود صاحب صدر جمعیۃ علماء برڈے لے آئو ٹ نے مکاتب کو منظم کرنے پر زور دیا۔ مکاتب سے بچوں کو جوڑنے کے لئے محلہ وار گشت کرنے اور لوگوں میں دینی تعلیمی بیداری پیدا کر نے پر زور دیا ۔ جلسہ کا اختتام قاری مسعود احمد صاحب کی دعا پر ہوا۔ اس مجلس کو کامیاب بنانے میں مولانا سراج احمد قاسمی صدر جمعیۃ علما ء ضلع ناگپور ، جنرل سکریٹری محمد سلیم انصاری ، خازن امتیاز الدین اختر ، محمد خلیق ثانی ،ودیگر اراکین جمعیۃ نے کوشش کی ۔