مرکزی حکومت نے اوپن زمرے کے لئے دیا گیا 10 فیصد EWS ریزرویشن  سپریم کورٹ نے قائم رکھا

Beed

مرکزی حکومت نے اوپن زمرے کے لئے دیا گیا 10 فیصد EWS ریزرویشن  سپریم کورٹ نے قائم رکھا

 

مسلم سماج نے کسی کے بہکاوے نہ آتے ہوئے ترقیاتی بہاؤ میں آنا چاہیئے۔۔سلیم جہانگیر

بیڑ ( رئیس خان فتح آبادی) مرکزی حکومت نے اوپن زمرے کے لئے دس فیصد ای ڈبلیو ایس ریزرویشن مُلک کے وزیر آعظم نریندر مودی حکومت نے دیا ہے۔اس دس فیصد ریزرویشن کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا۔لیکن گزشتہ یوم سپریم کورٹ نے ای ڈبلیو ایس کے دس فیصد ریزرویشن کو قائم رکھا ہے نیٹ پی جی کونسلنگ کا راستہ صاف ہوگیا ہے سپریم کورٹ نے27 فیصد اوبی سی ریزرویشن کو منظور ی دے دی ہے۔ای ڈبلیو ایس دس فیصد ریزرویشن بھی نافذ کیا ہے۔ای ڈبلیو ایس کی حد 8 لاکھ روپئے سالانہ رکھنے سے متعلق تنازعہ پر مارچ کے تیسرے ہفتے میں غور کیا جائے گا۔اس لئے مسلم سماج نے دس فیصد ریزرویشن کا فائدہ اٹھا کر ترقی کے بہاؤ میں شامل ہوجانا چاہئے اس طرح کی اپیل بھارتی جنتا پارٹی کے لیڈر سلیم جہانگیر نے کیا ہے۔مطب اور صرف ووٹ حاصل کرنے کے سیاست کرنے والوں کے بہکاوے نہیں آنا چاہیئے اس طرح بھی سلیم جہانگیر نے کیا ہے۔مُلک میں گزشتہ ستر سالوں سے سیکولر پارٹیوں نے مسلمانوں کا استعمال صرف ووٹ بینک کے طور پر کیا ہے سچر کمیٹی کی رپورٹ میں مسلمانوں کی معاشی اور تعلیمی خستہ حال کا ذکر کیا گیا۔مسلم سماج کے دیگر طبقے او بی سی اور ایس ٹی میں ہے لیکن اوپن زمرے کے لئے کُچھ بھی موقع نہیں تھے۔اس لئے بھارتی جنتا پارٹی مسلم دُشمن  ہے یہ ذہین میں سے نکال کر خود معاشی اور تعلیمی ترقی میں شامل ہونا چاہیے۔مُلک کے وزیر آعظم نے دس فیصد ریزرویشن دینے سے ہزاروں مسلم طلباء و طالبات تعلیم و نو کری میں فائدہ حاصل کرینگے۔اس لئے مسلم سماج کسی کے بہکاوے میں نہ آئے دس فیصد ریزرویشن کا زیادہ سے زیادہ فائدہ لے اس طرح کا پُر زور اپیل کی ہے۔