مفکر تعلیم ڈاکٹر عبدالقدیر اور تعلیمی کارواں کا بیڑ شاہین اکیڈمی کا دورہ

Beed

مفکر تعلیم ڈاکٹر عبدالقدیر اور تعلیمی کارواں کا بیڑ شاہین اکیڈمی کا دورہ

 

والدین، طلبا اور دانشوروں سے کیا مذاکرہ

 

بیڑ( رئیس خان فتح آبادی) ملک بھر میں NEET اور JEE کے عنوان سے اپنی منفرد پہچان رکھنے والے تعلیمی مرکز شاہین اکیڈمی کےروح رواں مفکر تعلیم ڈاکٹر عبدالقدیر سمیت تعلیمی کارواں کے معزز اراکین اور مفکرین جن میں مولانا آزاد نیشنل یونیورسٹی کے سابقہ وائس چانسلر خواجہ شاہد، جامعہ اسلامیہ دہلی کے پروفیسر انصاری ، نامور تعلیمی ٹرینر ڈاکٹر حلیمہ سعدیہ  ودیگر حضرات کا دورہ شاہین نالج اکیڈمی کے بیڑ مرکز پر ہوا۔ اس موقعہ شاہی اکیڈمی بیڑ میں ان مفکرین نے طلبا و سرپرست حضرات کے ساتھ مقابلہ جاتی میڈیکل داخلہ امتحانات اور تعلیمی مسائل پر کلیدی گفتگو کی۔ اس ضمن میں ڈاکٹر عبدالقدیر نے طلبا و سرپرست حضرات کی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر بننا انجینئر بننا تو ضروری ہے ہی لیکن ایک انسان بننا اور اچھے اخلاق سے خود کو متصف کرنا ایک سب سے ضروری امر ہے۔ اس معاملے میں بچوں کی اخلاقی تربیت اورنگہداشت کی ذمداری زیادہ تر ماں باپ پر عائد ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر کوئی ہمیں روکنے ٹوکنے والا ہو تو طلبا اسے غنیمت سمجھیں۔ عصری تعلیم کے ساتھ اپنی تہذیب اور دینی مزاج کو قائم رکھیں۔ اس پروگرام کے بعد ڈاکٹر عبدالقدیر نے دانشوران سے خصوصی میٹنگ میں خطاب کیا اور کہا کہ ہم سب امت کے لئے کچھ نہ کچھ لگانے والے بنیں۔ ہمارا یہ تجربہ ہے کہ یہ قوم دوسروں کو تعلیمی میدان دینے پر آجائے تو دوسری قومیں قطار لگاکر ان سے لینے والی بنینگی۔ انہوں نے کہا ہم سب کو اس بات پر توجہ دینی ہوگی کہ کوئی بچہ تعلیم سے محروم نہ ہو۔ جو بچے ڈراپ آؤٹ ہوچکے ہیں انہیں دوبارہ تعلیم سے جوڑا جائے۔ انہوں نے کہا کہ دینی مدارس سے فارغ حفاظ کے لئے ہمارے پاس بڑی اہم اسکیمیں ہیں اگر کوئی یتیم حافظ قرآن ہو تو ہم اسے مکمل تعلیم فری میں مہیا کرائیں گے۔ خیال رہے کہ شاہین اکیڈمی کے تعلیمی پروگرام AICU پروگرام چلایا جاتا ہے جس میں تعلیمی طور پر کمزور ڈراپ آؤٹ طلبا اور حفاظ کرام کو خصوصی تعلیمی تربیت دیکر مقابلہ جاتی امتحان کے لائق بنایا جاتا ہے۔ اب تک سینکڑوں حفاظ اس سے فایدہ اٹھاکر ڈاکٹری تک پہنچ چکے ہیں۔ شاہین اکیڈمی کے ذریعے NEET امتحان کامیاب ہونے والوں کی تعداد انڈیا میں ایک فیصد ہے۔ جبکہ کرناٹک کا سب سے بڑا سرکاری  تعلیمی ایوارڈ شاہین اکیڈمی کو دیا گیا ہے۔

اس موقعہ پر پروفیسر انصاری نے نئی تعلیمی ذمہ داریوں پر روشنی ڈالی اور نئے دور کے نئے تعلیمی اصطلاحات اور ضروریات سے طلبا و والدین کو واقف کرایا۔پریس کانفرنس میں تمام صحافیوں سے ڈاکٹر عبدالقدیر کی روبرو بات چیت پوئی۔ سوالات جوابات کے سیشن میں ڈاکٹر عبدالقدیر نے صحافیوں کو بتایا کہ گزشتہ سال ہی بیڑ شہر میں شاہین نالج اکیڈمی کا قیام عمل میں آیا اور تیقن دلایا کہ معیاری تعلیم اور بہتر نتائج کے لئے یہاں ہماری کوششیں مسلسل  جاری رہیگی اور اس کے لئے سسٹم میں جہاں بھی اصلاح کی ضرورت ہوگی اس پر خاص توجہ دی جائیگی۔ پروگرام کی نظامت قاضی وزیر کلیم اور سعید حماد نے بحسن و خوبی انجام دی۔ شاہین اکیڈمی بیڑ کے ڈائریکٹر رفیق تنبولی سر نے تمام مہمانان کا استقبال کیا اور پرنسپل ڈاکٹر عمران خان نے تمام شرکا کا شکریہ ادا کیا