مسلم معاشرے کو منشیات اور فحاشی سے پاک کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے

Maharashtra

مسلم معاشرے کو منشیات اور فحاشی سے پاک کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے

 اورنگ آباد میں منعقدہ تربیتی پروگرام میں مولانا ندیم صدیقی ،مولانا عبد القدیر مدنی و دیگر کا اظہار خیال

اورنگ آباد ۔ 23؍ نومبر 2021( پریس ریلیز ) آج یہاں جمعیۃ علماء ضلع اورنگ آباد کے زیر اہتمام سلمان فنکشن ہال دلی گیٹ اورنگ آباد میں جمعیۃ علماء کے عہدیداران و اراکین کا اک روزہ تربیتی اجلاس بصدارت مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی صاحب ( صدر جمعیۃ علماء مہا راشٹر )منعقد ہوا ،جس میں بڑی تعداد میں ضلع اور تعلقوں کے جمعیۃ علماء کے اراکین اور محبین نے شرکت کی ۔ اجلاس کا آغاز قاری سعد صاحب منجھلے گائوں کی تلاوت کلام پاک اور نعتیہ کلام سے ہوا ، جناب منیر عارف خان صاحب نے تحریک صدارت پیش کی ،مولانا نظام الدین صاحب ملی نے صدارت کی تائید کی ،مولانا معز الدین فاروقی ندوی ( صدر جمعیۃ علماء ضلع اورنگ آباد ) نے تمہیدی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ تربیتی پرو گرام ہماری اصلاح اور تربیت کے لئے رکھا گیا ہے ۔ مفتی عبد الرزاق صاحب ملی نے افتتاحی خطاب میں کہا کہ جمعیۃ علماء کی ایک سو سالہ روشن تاریخ ہے ہمیں اپنی تاریخ و روایت کو یاد رکھنی چاہئے جو قوم اپنی تاریخ کو بھول جاتی ہےوہ صفحہ ہستی سے مٹا دی جاتی ہے۔  

اس پروگرام کی صدا رت کرتے ہوئے جمعیۃ علماء مہاراشٹر کے صدر مولانا حافظ ندیم صدیقی نے کہاکہ جمعیۃ علماء کی تاریخ اور اس کی خدمات روزِ روشن کی طرح عیاں ہے، جمعیۃ کاکام کرنے والے کو اپنے کام اور اپنے مقام سے واقف ہونا چا ہئے اور ہمیں تنظیمی ڈھانچہ کو فعال اور مضبوط کرنے کے لئے ہر ممکن کو شش کرنا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ کسی تنظیم میں کام کرنے کے لئے عہدیداران کا انتخاب صرف اورصرف تنظیمی کام کو مضبوط کرنے کے لئے ہوتا ہے۔جس تنظیم کے ورکر مضبوط اور زندہ دل ہوتے ہیں وہ میدانِ عمل میں پیش پیش رہتے ہیں۔انہوں نے مسلم معاشرے کی بے راہ روی کا تذکرہ کرتے ہوئے جمعیۃ کے کارکنان کو اصلاح معاشرہ کی طرف توجہ دلائی اورکہا کہ ہمارے معاشرے میں نشہ کا کاروبار کھلے عام ہورہا ہے، اس سے ہمیں نوجوانوں کو روکنے اور مسلم معاشرے کو اس سے پاک کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔مولانا عبد القدیر صاحب مدنی ( نائب صدر جمعیۃ علماء مہا راشٹر ) نے تر بیتی پرو گرام کے انعقاد پر خوشی کا اظہار کیا ،انہوں نے جمعیہ کے کاموں کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ اگر جمعیۃ کی خدمات پر ایک مہینہ تک سیمینار منعقد کیا جائے تو وقت کم پڑسکتا ہے ،انہوں نےمزید کہا کہ جمعیۃ علماء اور اس کے کار کنان نے ہر موقع پر ملت اسلامیہ کی صحیح رہبری و رہنمائی کا فریضہ انجام دیا ہے اور حالات کے شکار لوگوں کی امداد کی ہے ۔

مولانا محمد ابراہیم قاسمی صاحب ( ناظم تنظیمی استحکام جمعیۃ علماء مہا راشٹر) نے جمعیۃ علماء کی دینی ،ملی ،رفاہی سر گرمیوں پر روشنی ڈالتے ہوئے فر مایا کہ آج اخلاقی اعتبار سے پورا نظام بگڑا ہوا ہے ،مغربی دنیا کے نظام سے دنیائے انسانیت پریشان ہے ،بے پردگی ،بے حیائی گناو و نا فر مانی کے کام عام ہیں جس کی وجہ سے شادی کرنا مشکل اور زناء آسان ہو گیا ہے۔انہوں نے جمعیۃ علماء کے کاز اس کے طریقہ کار قرآن و حدیث کی روشنی میں بیان کیا ۔ مفتی عبد الرحمن صاحب نائیگاوی ( نائب صدر جمعیۃ علماءمراہٹواڑہ )نے اپنے خطاب میں کہا کہ دینی تعلیمی بورڈ کا بنیادی مقصدجگہ جگہ معصوم بچوں کے لئے دینی تعلیم کا انتظام کرنا ہے دینی تعلیم نہ ہونے کی وجہ سے مسلمان کفر و شرک اور ارتداد کا شکار ہو رہا ہے ۔جناب ایڈوکیٹ عبد الماجد پٹیل صاحب نے مساجد کے رجسٹریشن سے متعلق قانونی رہنمائی کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں غفلت سے بیدار ہو کر مساجد کے کاغذات کی درستگی اور اور انہیں وقف بورڈ میں رجسٹریشن کرانے میں تاخیر نہیں کرنی چاہئے۔

 قاری شمس الحق قاسمی صاحب ( جنرل سکریٹری جمعیۃ علماء مراہٹواڑہ ) نے اصلاح معاشرہ کی ضرورت اور اہمیت پر خطاب کرتے ہوئے فر مایا کہ ہر ضلع ، شہر ،تعلقہ ،قصبہ اور دیہات میں اصلاح معاشرہ کی کمیٹیاں قائم کی جائیں ،مسلم خواتین کے لئے محفوظ مقام پر اصلاحی پروگرام کیا جائے۔مولانا حبیب الرحمن قاسمی صاحب ( صدر جمعیۃ علماء مراہٹواڑہ ) کی ناصحانہ گفتگو اور دعاء پر اجلاس اختتام پذیر ہوا ،جناب عبدالروف انجینر صاحب ( جنرل سکریٹری جمعیۃ علماء ضلع اورنگ آباد ) نے مہمان کرام اور شرکاء اجلاس سے اظہار تشکر کیا ،اس پروگرام کو کامیاب بنانے میں مولانا یونس غزالی ، الحاج خلیل خان ،ساجد انصاری ،منیر عارف خان ،مولانا عبد الستار ملی ،نور الحمید قریشی ،ایم ڈی طیب ظفر ،بھائی شفیق و دیگر اراکین نے اہم رول ادا کیا ۔