فلیریا کا خاتمہ عوامی شرکت سے ہی ممکن ہے: سنجے کمار سنگھ

National
 ایم ڈی اے میں 90 فیصد کوریج درکار ہے: ڈاکٹر نیرج ڈھنگرا

فلیریا کا خاتمہ عوامی شرکت سے ہی ممکن ہے: سنجے کمار سنگھ

 ایم ڈی اے میں 90 فیصد کوریج درکار ہے: ڈاکٹر نیرج ڈھنگرا

  پٹنہ / 14 ستمبر: فلیریا اور کالا زار کے خاتمے کے حوالے سے دو روزہ جائزہ میٹنگ کا اہتمام سنجے کمار سنگھ، ایگزیکٹو ڈائریکٹر، اسٹیٹ ہیلتھ کمیٹی، بہار کی صدارت میں کیا گیا۔ جس میں حکومت ہند کے فلیریا اور کالا آزار پروگرام سے متعلقہ افسران موجود تھے۔

ایم ڈی اے راؤنڈز کی بہتر کوریج فلیریاکے خاتمے کے لیے ضروری ہے۔ ایم ڈی اے راؤنڈ بہار میں 20 ستمبر سے 14 دن تک منعقد کیا جائے گا۔ جس میں لوگوں کو گھر گھر جاکر فائیلاریسیس کی دوا دی جائے گی۔ ایم ڈی اے راؤنڈ کے موثر نفاذ کے ذریعے فلیریا کو ختم کیا جا سکتا ہے۔ اسٹیٹ ہیلتھ کمیٹی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر سنجے کمار سنگھ نے کہا کہ ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ تمام اہل مستحقین کو ان کے سامنے ہیلتھ ورکروں کی جانب سے اینٹی فلیریا ادویات کھلائی جائیں، کیونکہ ہمیں ادویات کھلانی ہیں نہ کہ تقسیم کرنا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایم ڈی اے راؤنڈ کے لیے وسیع تشہیر کی اشد ضرورت ہے، جس سے کمیونٹی میں اینٹی فلیریا ادویات پر اعتماد بڑھے گا۔ ہمیں فرنٹ لائن ورکرز کو بھی اس کے بارے میں آگاہ کرنے کی ضرورت ہے، تاکہ وہ عام لوگوں کو ادویات کے استعمال کی اہمیت سمجھائیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کے لیے بلاک سطح کے ہیلتھ ورکروں کو آشا اور اے این ایم کے ساتھ بہتر رابطہ قائم کرنے کی ضرورت ہوگی۔ اسی کے ساتھ کوئی بھی کمیونٹی لیول پروگرام کامیاب ہو سکتا ہے۔

 

 فلیریا آگاہی وین روانہ کی گئیں:سنجے کمار سنگھ، ایگزیکٹو ڈائریکٹر، ڈاکٹر نوپور اور ڈاکٹر چھوی نے مشترکہ طور پر دو آگاہی وینوں کو ہری جھنڈی دیکھا کر روانہ کیا تاکہ ایم ڈی اے راؤنڈ اور فلیریا کے بارے میں عمومی شعور کوفروغ دیا جائے۔ڈاکٹر نیرج ڈھنگرا، ڈائریکٹر، نیشنل ویکٹر بورن ڈیزیز کنٹرول پروگرام، حکومت ہند نے کہا کہ اگر ریاست کے 90 فیصد لوگوں کو ادویات کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے تو ریاست سے فلیریا کا خاتمہ ممکن ہے۔ ڈاکٹر ڈھنگرا نے کہا کہ کورونا وبائی مرض کے چیلنجوں کے درمیان بھی ہم لوگوں کو فلیریا جیسی سنگین بیماریوں سے بچانے کے لیے پرعزم ہیں۔ بہار حکومت اور اس سے وابستہ اداروں کے تعاون سے بہار سے فلیریاکا خاتمہ کرکے ایک نئی مثال قائم کی جا سکتی ہے۔ ڈاکٹر نوپور رائے، ایڈیشنل ڈائریکٹر، نیشنل ویکٹر بورن ڈیزیز کنٹرول پروگرام، حکومت ہند، نے کہا کہ ایم ڈی اے کا کردار فلیریا کے خاتمے میں اہم ہے۔ فلیریاکے نئے کیسز سے بچنا اور فلیریل مریضوں میں مور بی ڈی ٹی مینجمنٹ پر توجہ مرکوز کرنا فلیریل کے خاتمے کے دو مضبوط ستون ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صفر ہائیڈروسیل کا ہدف فلیریا کے خاتمے کی سمت میں بہت کارآمد ثابت ہو سکتا ہے۔ اس کے لیے تمام اضلاع کو ایک طے شدہ ایکشن پلان کے تحت کام کرنے کی ضرورت ہے۔دوسری طرف ڈائریکٹر ہیڈ، ہیلتھ سروسز، حکومت بہار، ڈاکٹر نوین نے کہا کہ فلیریاکی وجہ سے ہاتھی پاؤں کی حالت ہونا انتہائی افسوسناک ہے۔ ایم ڈی اے اس کی روک تھام کے لیے ایک سنگ میل ثابت ہو سکتا ہے۔ مشن اور ریسرچ موڈ پر کام کر کے فلیریا کا خاتمہ ممکن ہے۔

 

ٹرانسمیشن تشخیص سروے ریاست کے 6 اضلاع میں کیا جائے گا:ڈاکٹر چھوی پنت، جوائنٹ ڈائریکٹر، نیشنل ویکٹر بورن ڈیزیز کنٹرول پروگرام، حکومت ہند نے کہا کہ گزشتہ سال کوویڈ انفیکشن کی وجہ سے ایم ڈی اے راؤنڈ نہیں ہو سکا۔ اس سال 20 ستمبر سے ریاست کے 22اضلاع میں ایم ڈی اے راؤنڈ شروع ہو رہا ہے۔ لائن لسٹنگ، نائٹ بلڈ سروے اور آشا کی تربیت مہم کی کامیابی کے لیے اہم ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ایم ڈی اے راؤنڈ سال 2004 سے چلایا جا رہا ہے۔ اس کے پیش نظر حکومت ہند بہار کے 6 اضلاع میں ٹرانسمیشن اسسمنٹ سروے کرے گی۔ جس میں اروال، گیا، کھگڑیا، بھوج پور، کٹیہار اور پورنیہ اضلاع شامل ہوں گے۔ ٹاس کے ذریعے یہ معلوم کرنا آسان ہو جائے گا کہ کس علاقے میں فلیریا کا پھیلاؤ ختم ہو گیا ہے یا کس علاقے میں اب بھی ایم ڈی اے راؤنڈ چلانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کسی ضلع میں ایم ڈی اے راؤنڈ چلانے کی ضرورت ختم ہو جاتی ہے تو ایسے ضلع کو مرکزی حکومت کی طرف سے انعام بھی دیا جائے گا۔

 

   اس دوران ایم ڈی اے راؤنڈ پر ریاستی سطح کا پاور پوائنٹ پریزینٹیشن بھی دیا گیا۔ جس میں بتایا گیا کہ دسمبر 2020 تک ریاست میں ہاتھی پاؤں والے 1.25 لاکھ کیس اور ہائیڈروسل کے 46360 کیسز تھے۔ اس کے ساتھ ایم ڈی اے راؤنڈ کی کامیابی کے لیے مائیکرو پلاننگ، مانیٹرنگ اور نگرانی، روزانہ شام کی میٹنگ اور مڈ کورس ریویو پر تفصیلی معلومات دی گئیں۔ عالمی ادارہ صحت، کیئر، پی سی آئی، جی ایچ ایس، چائی اور پاتھ جیسی شراکت دار تنظیموں نے لوگوں کو پاور پوائنٹ پریزنٹیشنز کے ذریعے فلیریاکے خاتمے کی سمت میں ہونے والی پیش رفت سے آگاہ کیا۔