حضرت مولانا نور عالم خلیل امینی رحمہ اللہ، اس دارفانی سے کوچ کرگئے

National

حضرت مولانا نور عالم خلیل امینی رحمہ اللہ، اس دارفانی سے کوچ کرگئے

مفتی معاذ قاسمی بیڑ مہاراشٹر

 

ایک دیا اور بجھی اور بڑھی تاریکی ،جہان علم وادب کی بے مثال شخصیت ،موقر استاذ ادب عربی دارالعلوم دیوبند و ایڈیٹر ماہنامہ الداعی،  حضرت مولانا نور عالم خلیل امینی رحمہ اللہ آج صبح صادق سے کچھ قبل اس دارفانی سے کوچ کرگئے۔

 آپ کا سوانحی خاکہ کچھ اس طرح ہے :

آپکی پیدائش 18 ڈسمبر 1952 کوبہار کے ضلع مظفر پور  کے گاٶں ہرپور بیشی میں  ہوئی ،ابتدائی تعلیم مدرسہ امدادیہ دربھنگہ دارالعلوم مٸو اور دارلعلوم دیوبند میں ہوٸ تکمیل درس نظامی کیلۓ آپ نے مدرسہ امینیہ دہلی میں داخلہ لیا درس نظامی سے فراغت کے بعد آپ نے اپنے ذاتی ذوق اور اکابر کی سرپرستی میں  ادب عربی واردو کی کمان سنبھال،اور درجنوں عربی واردو کتابیں لکھیں جن میں آپ کی تصانیف کافی مشھور بھی ہوٸ  اور شامل نصاب بھی ،آپ والا کے مضامین تحقیقات اور معلومات سے بھر پور  زبان وبیان کی سلاست اوراسلوب وتنوع کا وہ گوہر ہواکرتی کہ قارٸین پڑھنے پر مجبور ہوجاتا ،آپ کے مشہور اساتذہ میں حضرت مولانا وحید الزماں کیرانوی مولانا محمد میاں صاحب دیوبندی ہیں ،آپ کٸ دہاٸیوں سے دارالعلوم دیوبند میں مدرس  اورماہنامہ الداعی کے  مدیر اعلی تھے ،2017 میں آپ والا کو صدارتی سرٹیفکٹ آف آنر کے اعزاز سے حکومتی طور پر نوازا گیا ،آپ کے انتقال پر حضرت مولانا ارشد مدنی دامت برکاتہم نے فرمایا ،ایک ایسا غم ہے جسے غلط نہیں کہا جاسکتا یہ ایک ایسا غم ہے جسے مندمل نہیں کیا جاسکتا اور وہ غم ہے دارالعلوم کے سپوت مولانا نور عالم خلیل الامینی رح کا ۔انتہی ۔،اللہ حضرت والا کی مغفرت فرمائیں درجات بلند فرمائیں اور پسماند گان کو صبر جمیل عطافرمائیں۔آمین