ایسا کہاں سے لاؤں ےتجھ سا کہے جسے

Ayisa Kahan se Laoon k

ایسا کہاں سے لاؤں ےتجھ سا کہے جسے

موت العالِم موت العالَم

سرکاردوجہاں کا فرمان اس قدر جامع اور سچا ہے کہ ایک عالم دین کی موت پورے عالم کی موت ہے۔          
نہایت رنج و غم کے ساتھ یہ لکھنا پڑرہا ہے کہ مسلمانوں کی مضبوط آواز مؤقر دینی و ملی رہنما امیر شریعت حضرت مولانا ولی رحمانی نور اللہ مرقدہ ایک تھکے ماندے مسافر کی طرح آج بتاریخ ۳؍اپریل ۲۰۱۰؁ءبروزِ سنیچر بعد نمازظہراس دار فانی کو چھوڑ کر اپنے مالک حقیقی سے جاملے۔ إنا للہ وإنا إلیہ راجعون۔ موت ایک ایسی حقیقت ہے جسے قبول کرنے کے علاوہ کوئی چارہ ہی نہیں، یہ خبر منٹوں میں،دنیا کے گوشے گوشے میں، جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی۔ ہر شخص نے بڑے افسوس کے ساتھ اس خبر کو پڑھا اور سنا اور دوسروں کو بتایا،اللہ تعالیٰ حضرت امیر شریعت کی بال بال مغفرت فرمائے اور ان کی خدمات کو قبول فرمائےو جنّت الفردوس میں جگہ عنایت فرمائے،امت مسلمہ کو نعم البدل عطاء فرمائے جملہ پسماندگان و لواحقین اور ان کے اہل خانہ کو صبر جمیل عطا فرمائے آمین

                                                                   دعاء گو

                                                              فہیم اکرم ندوی دربھنگوی