حافظ ایوب صاحب مہتمم احیاء العلوم بارہ کھولی دریا پور کا انتقال

Hafiz Ayub Sahib, Bara Kholi Daryapur passed away

علاقہ کے معروف و مشہور عالم دین جمعیۃ علماء دریاپور ضلع امراوتی کے صدر
حافظ ایوب صاحب مہتمم احیاء العلوم بارہ کھولی دریا پور کا انتقال
جمعیۃ علماء مہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ ندیم صدیقی،مفتی محمد روشن قاسمی کا اظہار تعزیت
 

 امراوتی ۔ 30 ؍ مارچ ( پریس ریلیز ) انتہائی افسوس کے ساتھ یہ اطلاع دی جاتی ہے کہ علاقے کے معروف و مشہور عالم دین جمعیۃ علماء دریاپور کےصدر حافظ ایوب  صاحب(مہتمم احیاء العلوم بارہ کھولی دریا پور ضلع امراوتی ) طویل علالت کے بعد آج بتاریخ 30؍مارچ 2021 ،بروز منگل بعد نماز ظہر اس دارفانی کو چھوڑ کر اپنے مالک حقیقی سے جا ملے ۔ انا للہ و انا الیہ راجعون ،مرحوم کو بخار و کھانسی کے ساتھ دمہ کا عارضہ گذشتہ تقریباایک مہینہ سے امراوتی کے ایک ہسپتال میں ماہر ڈاکٹروں کی نگرانی میں علاج جاری تھا کل شام سے طبیعت کچھ زیادہ ہی بگڑ گئی تھی اور آج وہ جانبر نہ ہو سکےاور 45 ؍سال کی عمر میں اللہ کو پیارے ہوگئے ،اللہ رب العزت غریقِ رحمت کرے ،جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فرمائے۔
حافظ ایوب کے انتقال پر ملال پرجمعیۃ علما ءمہا راشٹر کے صدر مولانا حافظ محمد ندیم صدیقی صاحب،مفتی محمد روشن شاہ قاسمی صدر دینی تعلیمی بورڈ مہا راشٹر نے گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کاسانحہ وفات جہاں اہلیان دریا پورکےلئے ایک بڑا صدمہ اور ناقابل تلافی نقصان ہے وہیں جمعیۃعلماء دریا پور ضلع امراوتی ایک مخلص ،بےلوث خادم اور انسانیت کی خدمت کے لئے ہمہ وقت تیار رہنے والے کارکن سے محروم ہو گئی ہے ،احیاء العلوم کے اساتذہ اور طلبہ بھی ایک مشفق خیر خواہ ،ہمدرد و غمگسار ذمہ دار سے محروم ہو گئے ہیں ، مرحوم بڑے رحم دل ،چھوٹو ںکو حوصلہ دینے والے،کام کرنے والوں کی قدردانی کرنے والے تھے،بہت ملنسار،خوش مزاج طبیعت کے مالک تھے۔
مولانا ندیم صدیقی نے تعزیت مسنونہ اور دعائے مغفرت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہم مرحوم کے اہل خانہ ،کے غم میں برابر کے شریک ہیں ،اللہ تعالی مرحوم کی کروٹ کروٹ مغفرت فرمائے ،جنت الفردوس میں اعلی مقام عطاء فر مائے ، ان کے حسنات کوقبول فرمائےپسماندگان اور لواحقین کو صبر جمیل عطاء فر مائے ۔صوبے بھر کے تمام جمعیتی احباب ،اراکین ،ائمہ مساجد ، اورذمہ داران مدارس سے اپیل کی ہے کہ وہ مرحوم کےلئے ایصال ثواب اور دعائے مغفرت کا اہتمام کریں۔